فوجی عدالتوں کی توسیع میں محالفت،پیپلزپارٹی

پیپلز پارٹی نے ملک میں فوجی عدالتوں کی مدت میں مزید توسیع کی حمایت نہ کرنے ، اٹھارویں آئینی ترمیم کا بھر پور دفاع کرنے ،قومی سیاسی معاملات پر پارلیمنٹ اور اس کے باہر موثر آواز بلند کرنے کا فیصلہ ہے۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سابق صدر آصف زرداری نے کہا کہ ا س طرح سرکار نہیں چل سکتی۔ حکومتی ہتھکنڈوں کے خلاف عوامی، پارلیمانی فورم استعمال کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ گرتی ہوئی دیوارکوکوئی اور دھکا نہیں دیتا، وہ خود ہی گر جاتی ہے۔ سازشیں کرنے والوں کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ زرداری نے کہا کہ کہ میرا اوربلاول کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے والوں کوبتانا چاہتا ہوں، اس طرح کے مسائل پہلے بھی برداشت کر چکے ہیں۔ پیپلز پارٹی کی اعلی قیادت کا اہم اجلاس چیئرمین بلاول بھٹو زردای کی زیر صدارت ہوا ۔اجلاس میں ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا ۔ بعد ازاں میڈیا کو بریفنگ میں سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے کہاکہ اجلاس میں ملک کی مجموعی سیاسی اور اقتصادی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اس بات پر تشویش کا اظہار کیا گیا کہ حکومت کی ناقص اقتصادی پالیسی سے پورا ملک ایک بحرانی کیفیت سے دوچار ہے۔ غریب لوگوں کا گزربسر مشکل ہوگیا ۔ اب منی بجٹ بھی آرہا ہے ۔ اس موقع پر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ ایسے غیر معمولی قانون تخلیق کئے جانے سے کہیں ایسا نہ ہوکہ عدلیہ ملٹرائیز ہو جائے۔ جے آئی ٹی اور دیگر بھی ملٹرائیز ہوگئے ۔انہوں نے کہا کہ جب عدالت لاپتہ افراد کا پوچھتی ہے تو کہا جاتا ہے معاملہ ملٹری کورٹ میں ہے۔ اس طرح دیگر معاملات بھی ملٹرائیز ہوسکتے ہیں۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment