مریم نواز کی سیاست میں واپسی

مریم نواز کی طویل عرصے بعد سیاست میں واپسی، نواز شریف کی ممکنہ سزا کی صورت میں سابقہ دختر اول ن لیگ کی عوامی رابطہ مہم کا حصہ بن کر اسے لیڈ کریں گی۔ تفصیلات کے مطابق سابق حکمران جماعت پاکستان مسلم لیگ ن نے 30 دسمبر سے عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس حوالے سے پیر کے روز سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف اور محمد شہباز شریف کی زیر صدارت مسلم لیگ ن کا اعلیٰ سطح کا اجلاس اسلام آباد میں منعقد ہوا ۔
اجلاس میں سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے پارٹی رہنماؤں کو ن لیگ کے تنظیمی امور پر بریفنگ دی۔ اجلاس میں ملک بھر میں پاکستان مسلم لیگ ن کی از سر نو تنظیم سازی کا معاملہ زیر غور آیا۔ اس کے علاوہ پارلیمنٹ میں قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل اور اپوزیشن کو ملنے والے حصے پر بھی بات چیت کی گئی۔

ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن نے 30 دسمبر سے عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس سلسلے میں ابتدائی طور پر ہر ڈویژنل ہیڈکوارٹرز میں جلسے کیے جائیں گے۔ عوامی جلسوں سے کئی ماہ سے سیاسی سرگرمیوں سے دور سابق وزیراعظم نواز شریف بھی خطاب کریں گے۔ جبکہ ن لیگ کی جانب سے منعقد کیے جانے والے جلسوں سے احسن اقبال، خواجہ آصف، شاہد خاقان عباسی، مشاہد اللہ خان بھی خطاب کریں گے۔ جبکہ یہ بھی بتایا جا رہا ہے کہ نواز شریف کو ممکنہ سزا کی صورت میں سابق دخر اول مریم نواز بھی عوامی رابطوں کا حصہ بن جائیں گی۔
نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز ناصرف مسلم لیگ ن کی عوامی رابطہ مہم کا حصہ بنیں گی، بلکہ مہم کو لیڈ بھی کریں گی۔ دوسری جانب نواز شریف نے موجودہ حکومت کیخلاف طبل جنگ بجاتے ہوئے کہا ہے کہ نیب کا پردہ عوام کے سامنے چاک ہو چکا ہے، اب عوام کی آواز پر کان دھرنا ہو گا۔ نواز شریف نے کہاکہ اس وقت سب سے بڑا چیلنج معیشت کا ہے اور موجودہ حکومت میں ملک کو سنبھالنے کی اہلیت نہیں ہے۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ موجودہ حکومت نے 100 روز میں ہی معیشت کا برا حال کر دیا ہے۔ نواز شریف نے چاروں صوبائی ہیڈکوارٹرز میں پارٹی دفاتر قائم کرنے کی ہدایت کی ہے جبکہ پارٹی رہنماؤں کو کارکنوں سے روابط بڑھانے اور کارکنوں کو فعال کرنے کی ہدایت بھی کی ہے۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment