بلاول بھٹو زرداری کو جے آئی ٹی نے طلب کرلیا۔

سندھ میگا منی اسکینڈل میں جے آئی ٹی نے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری، چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور فریال تالپور کو 28 نومبر کو طلب کرلیا گیا۔سندھ میگامنی لانڈرنگ اسکینڈل کی تفتیش کرنے والی ٹیم نے عدالتی حکم پر زرداری گروپ پرائیویٹ لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹوبلاول بھٹو زرداری، آصف علی زرداری اور کمپنی کی ڈائریکٹرفریال تالپورکوبجے طلب کیا ہے۔ تینوں رہنماوں سے جعلی اکاونٹس کے ذریعے زرداری گروپ کے اکاونٹس میں رقم منتقلی سے متعلق سوالات کئے جائیں گے۔آصف زرداری سے ان کی املاک ، اومنی گروپ سے روابط اور دستاویزات پر ان کے ہاتھ سے لکھی گئی تحریروں کے بارے میں سوالات کیے جاسکتے ہیں ۔تفتیشی ٹیم آئندہ ہفتے انورمجید، اے جی مجید سے بھی تفتیش کرے گی ملک ریاض کو بھی آئندہ ہفتے تفتیش کے لئے بلوایا جائے گا۔تفتیشی ٹیم نے اومنی گروپ کو بیمار صنعتوں کی بحالی کے لئے سندھ حکومت کے افسران کی جانب سے 4ارب روپے دینے معاملے پر پوچھا کہ کس فورم کے تحت اومنی گروپ کی صنعتوں کو بیمار صنعت قراردیاگیا؟ سندھ کی دیگر بیمار صنعتوں کو چھوڑ کر صرف اومنی گروپ کی صنعتوں کو ہی کیوں نوازاگیا؟ ٹھٹھہ شوگر ملز کیلیے ایک ارب روپے لینے کے باوجود ملز شروع کیوں نہیں کی گئی؟۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے سندھ میگا منی لانڈرنگ اسکینڈل کے تحت جعلی اکاؤنٹس کیس کی تحقیقات کے لئے جے آئی ٹی تشکیل دی تھی جس کے سربراہ ایڈیشنل ڈائریکٹر ایف آئی اے احسان صادق ہیں۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment