کیا واقعی ہی شہباز شریف کی رپورٹ میں کینسر کے علامات ظاہر ہو گی ؟ ڈاکٹرز کا بڑا انکشاف

مسلم لیگ ن کے صدر اور اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف کی میڈیکل رپورٹ میں کینسر کی علامات ظاہر ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ تفصیلات کے مطابق شہباز شریف کی بلڈ رپورٹ میں کینسر کی علامات ظاہر ہوئیں۔ کینسر کی تشخیص شہباز شریف کے خون کے تجزیے کی رپورٹ میں ہوئی۔ ٹیسٹ شہباز شریف کے گلے میں تکلیف کے باعث کروائے گئے تھے۔
ذرائع کے مطابق شہباز شریف کے خون میں ایڈینو کارسنائیڈ نوڈیول کی مقدار 688 پائی گئی۔جس پر ڈاکٹروں نے شہباز شریف کو فوری طور پر سی ٹی اسکین کروانے کا مشورہ دے دیا ہے۔یاد رہے کہ شہباز شریف اس سے قبل بھی کینسر کے عارضے میں مبتلا رہ چکے ہیں، لیکن وہ سرطان سے صحتیاب ہو گئے تھے۔واضح رہے کہ سرطان کے مریضوں میں دوبارہ مرض ظاہر ہونے کے امکانات موجود ہوتے ہیں۔
گذشتہ روز مسلم لیگ ن کے صدر اور اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف کو لاہور سے اسلام آباد پہنچا دیا گیا۔ شہباز شریف کو قومی ائیر لائن پی آئی اے کی پرواز پی کے 1852 کے ذریعے لاہور سے اسلام آباد لے جایا گیا۔ شہباز شریف کو ایئر پورٹ سے سیدھا منسٹرز انکلیو منتقل کیا گیا، جہاں میڈیکل بورڈ نے ان کا طبی معائنہ کیا۔ 3 رکنی میڈیکل بورڈ پولی کلینک اسپتال کے ڈاکٹرز پر مشتمل تھا، کنسلٹنٹ فزیشن ڈاکٹر آصف عرفان میڈیکل بورڈ کے سربراہ ہیں۔
کارڈک فزیشن ڈاکٹرحامد اور نیب کے ڈاکٹر امتیاز میڈیکل بورڈ کا حصہ ہیں، یہ میڈیکل بورڈ شہباز شریف کا معمول کا طبی معائنہ کرے گا، خصوصی میڈیکل بورڈ نیب کی درخواست پر تشکیل دیا گیا جو اسلام آباد میں قیام کے دوران شہباز شریف کے ہمراہ ہی رہے گا اور وقتاً فوقتاً شہباز شریف کا طبی معائنہ کرے گا۔یاد رہے کہ اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف کی قومی اسمبلی کے گذشتہ اجلاس میں شرکت کے وقت بھی نیب کی درخواست پر میڈیکل بورڈ ترتیب دیا گیا تھا۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment