شکر ادا کرتے ہیں کہ ہم نے آسیہ بی بی کیس نمٹا دیا ہے۔ چیف جسٹس ثاقب نثار

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا ہے کہ کرپشن پاکستان کے بڑے مسائل میں سے ایک ہے ۔پٹواری کی رپورٹ پر منتقل ہونے والی جائیداد آپ نہیں رکھ سکتے۔ کسی پر الزام نہیں ڈالنے کی کوشش نہیں کررہا۔ معاملہ حل کرنا عدلیہ کی ذمہ داری ہے۔ آسیہ بی بی کیس اتنا طویل عرصہ نہیں چلنا چاہیے تھا۔یہ کیس کئی برسوں سے تعطل میں پڑا تھا۔شکر ہے ہم نے نمٹا دیا ۔آسیہ بی بی کو کسی جگہ پناہ لینے کی ضرورت نہیں۔ آسیہ بی بی کو کسی ملک میں پناہ ملنے کا مطلب ہوگا ہم ناکام ہوگئے۔ آسیہ بی بی کو مکمل تحفظ دینا چاہیے ۔عدالت کے بارے میں غلط بات کرنے والوں کے خلاف ایکشن سے متعلق آپ جلد سنیں گے ۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے برطانوی پارلیمنٹ کا دورہ کیا ۔ چیف جسٹس نے پاکستان نژاد برطانوی ارکان پارلیمنٹ سے گفتگو میں کہاکہ کالا باغ ڈیم بہت زیادہ متنازع ہے لیکن جن ڈیمز پر قومی اتفاق رائے ہو وہ ڈیم بنانا آسان ہے، پانی کی سطح گرگئی ۔ چند برسوں میں پانی ہوگا نہ ڈیم ہوں گے۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment