سپریم کورٹ بار کے انتخابات کے لیے پولنگ جاری، حامد خان اورعاصمہ جہانگیر گروپس کے درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع

پاکستان کے وکلاءکی سب سے اہم تنظیم سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سالانہ انتخابات کے لیے پولنگ جاری ہے، انتخابات میں حامد خان اورعاصمہ جہانگیر گروپس کے درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے۔

بار انتخابات کے لئے پولنگ کا عمل پولنگ اسلام آباد، لاہور، کراچی، کوئٹہ، پشاور، حیدرآباد، ایبٹ آباد، بہاولپور، اور دوسرے سٹیشنوں پر جاری ہے جہاں وکلاءاگلے سال کے لیے اپنے نمائندے چننے کے لیے اپنا ووٹ کاسٹ کر رہے ہیں۔

انتخابات میں سپریم کورٹ بار کے مختلف عہدوں کے لئے بہت سے امیدوار مقابلے میں ہیں تاہم اصل مقابلہ حامد خان کی زیرقیادت پروفیشنل گروپ اور مرحومہ عاصمہ جہانگیر کے قائم کردہ انڈیپنڈنٹ گروپ کے امیدواروں کے درمیان ہیں

حامد خان گروپ کی طرف سے صدارت کے امیدوار امان اللہ کنرانی ہیں جبکہ عاصمہ جہانگیر گروپ نے علی احمد کرد کو کنرانی کے خلاف میدان میں اتارا ہے۔ دونوں صدارتی امیدواروں کا تعلق بلوچستان سے ہے۔سپریم کورٹ بار کے روٹیشن کی پا لیسی کے مطابق اس سال صدر بلوچستان سے ہوگا۔ روٹیشن کی پالیسی کے مطابق ہر سال صدر الگ صوبے سے منتخب ہوتا ہے۔پولنگ صبح 9 بجے شروع ہوئی جو کہ بلاتوقف شام 5 بجے تک جاری رہے گی۔ ملک بھر میں تین ہزار سے زائد وکلاءووٹ کاسٹ کریں گیں۔سیکریٹری کے عہدے کے لئے شمیم الرحمان ملک اور عظمت اللہ چوھدری کے درمیان مقابلہ ہوگا جبکہ فنانس سیکریٹری کی سیٹ کے لئے علی احمد رانا اور محمود اے شیخ کے درمیان مقابلہ ہوگا۔آج کے انتخابات میں کل 3051 ووٹرز حق رائے دہی کا استعمال کرینگے۔ لاھور میں 1291 ووٹرز ووٹ کاسٹ کرینگے جبکہ کراچی میں 504، اسلام آباد میں 484 اور پشاور میں 280 ووٹرزووٹ ڈالیں گے۔۔کوئٹہ میں 196، بھاولپورمیں 89 اور ملتان میں 203 ووٹرز ووٹ کاسٹ کرینگے۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment