منی لانڈرنگ کیس،چیف جسٹس نے وزیراعلی سندھ کو طلب کرلیا

سپریم کورٹ رجسٹری میں چیف جسٹس نے جے آئی ٹی کی جانب سے عدم تعاون کی شکایات پر وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کو طلب کرلیا۔

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سندھ منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کے دوران مشترکا تحقیقاتی ٹیم کی جانب سے رپورٹ عدالت میں پیش کردی گئی۔ دورانِ سماعت جے آئی ٹی کے سربراہ احسان صادق اور دیگر ممبران بھی کمرہ عدالت میں موجود رہے۔
 
چیف سیکریٹری نے عدالت کو بتایا کہ ہم نے تمام ریکارڈ جے آئی ٹی کو دیدیا ہے، اس پر چیف جسٹس پاکستان نے جے آئی ٹی سربراہ سے پوچھا کہ تمام دستاویزات مل گئی ہیں؟۔ جے آئی ٹی سربراہ احسان صادق نے عدالت کو بتایا کہ تمام دستاویزات مل گئی ہیں، تاہم اسکروٹنی کرنا ابھی باقی ہے، تحقیقات میں مدد پر ہم عدالت کے شکرگزار ہیں۔
 
سماعت کے دوران جے آئی ٹی اراکین نے محکموں کی جانب سے عدم تعاون اور ریکارڈ وقت پر نہ دینے سے متعلق سابق آرڈر پڑھ کر سنایا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اومنی گروپ پر بلین کے واجبات ہیں، یہ اتنی بڑی رقم بینک کھا گیا یا اومنی گروپ؟سندھ بینک اسی لئے تو انضمام کرنے جا رہا تھا کہ اس بات کا پتہ ہی نہ چلے۔
 
انہوں نے مزید کہا کہ جب تک ایک ایک ریکارڈ جے آئی ٹی کو نہیں مل جاتا،ہم کراچی ہی میں بیٹھے ہیں۔ اس موقع پر جے آئی ٹی کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ اومنی گروپ پر مجموعی طور پر73ارب کا قرض ہے۔ کیس کی سماعت جاری ہے۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے