پیپلزپارٹی سے سندھ چھن جانے کا امکان

تین درجن سے زائد اراکین سندھ اسمبلی پر مشتمل فارورڈ بلاک بن گیا، اپوزیشن جماعتوں سے مل کر پیپلز پارٹی کی حکومت کا تختہ الٹا جا سکتا ہے
نیب نے کرپشن میں ملوث نامور سیاستدانوں کی گرفتاری بارے بڑا آپریشن شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ‘ نیب نے انتہائی اہم ثبوت حاصل ہونے کے بعد اگلے چند دنوں میں ان تیس قومی سیاستدانوں کی گرفتاری کا فیصلہ کیا ہے متوقع طور پر گرفتار کئے جانے والوں میں تین سابق وزرائے اعظم شامل ہیں جن میں دو کا تعلق پیپلزپارٹی سے بتایا جارہا ہے۔
مصدقہ ذرائع کے مطابق نیب آئندہ ہونے والی بورڈ میٹنگ میں ان گرفتاریوں کے حوالے سے منظوری لینے کا ارادہ رکھتا ہے۔ نیب کے کرپشن کے خلاف اس بڑے آپریشن کی حتمی تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں اور اس بلا امتیاز آپریشن کے دوران سندھ ،ْ پنجاب ،ْکے پی کے ور بلوچستان کے کئی بڑے سیاستدان زد میں آجائیں گے۔
نیب کی تحقیقات کے مطابق ان تیس سیاستدانوں کے خلاف پانچ کھرب روپے سے زائد کی کرپشن کے مختلف کیسوں کی تفتیش کی گئی۔
جس کے دوران نیب کے تفتیشی افسران نے ناقابل تردید شواہد حاصل کے ہیں۔ نیب حکام نے یہ تفصیلات چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کو بتادی ہیں ۔ باوثوق ذرائع کا کہنا ہے کہ ان تحقیقات کی روشنی میں بلوچستان کے سابق وزیراعلیٰ اسلم رئیسانی کی گرفتاری کا بھی امکان ہے۔ جبکہ مسلم لیگی رہنماء امیر مقام کے خلاف ناجائز اثاثے بنانے کا مقدمہ بھی حتمی شکل اختیار کر چکا ہے۔
جبکہ سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف کے خلاف منی لانڈرنگ کے اہم شواہد نیب نے حاصل کرلئے ہیںاور اسی طرح سابق وزیر خزانہ شوکت ترین کے خلاف آئی پی پیز سکینڈل کی تمام دستاویزات نیب نے حاصل کرلی ہیں اور سابق وزیراعظم شوکت عزیز ناجائز اثاثہ جات کے کیس میں تحقیقات مکمل کی گئی ہیں جبکہ پیپلزپارٹی کے دو سابق وزرائے اعظم بھی اس آپریشن کی لپیٹ میں آرہے ہیں۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment