ترک حکام کی سعودی امبیسی کی تلاشی

سعودی صحافی جمال خشکش جی کے لاپتہ ہونے کے بعد ترک حکام نے اس عمارت کی استنبول میں سعودی قونصل خانے میں پہلی بار تلاشی لی ہے. منگل کو عمارت کے باہر ترکی کے پولیس نے منگل کو دیکھا ہے.

ترک حکام کا دعوی ہے کہ خشکی کو سعودی قونصل خانے میں قتل کیا گیا تھا جبکہ سعودی حکام نے اس الزام سے انکار نہیں کیا ہے.

دریں اثنا، امریکی سیکرٹری خارجہ مائک پوموپوش خششمی منگل کو ریاض میں پہنچ گئے تاکہ ساشیکیوں کی غائب ہونے سے متعلق صورتحال پر تبادلہ خیال کریں.

امریکی صدر ڈونالڈ ٹمپمپ نے فون پر سعودی عرب کے بادشاہ سلمان کو فون کیا، جس کے بعد انہوں نے کہا کہ جمال خشکک جی کے اشارے کے پیچھے کچھ ‘بدمعاش قاتل’ ہوسکتا ہے.

شاہ سلمان سے بات کرنے کے بعد، صدر ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ سعودی حکومت بالکل واضح ہے کہ خورشید کو کیا ہوا ہے.

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے، امریکی صدر ڈونالڈ ٹمپمپ نے کہا، "میں نے سعودی عرب کے بادشاہ سلمان سے بات کی ہے، لیکن انہوں نے کہا کہ ہمارے سعودی شہری کے ساتھ کیا ہوا.

انہوں نے کہا کہ اس سوال کا جواب دینے کے لۓ وہ قریبی کام کررہے ہیں. میں فوری طور پر سعودی عرب کے بادشاہ سے ملنے کے لئے وزیر خارجہ مائک پوموپو سے نکل رہا ہوں. ‘

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment