زینب قتل کیس کے مجرم عمران علی کی ممکنہ آخری خواہش

زینب قتل کیس میں سزا یافتہ مجرم عمران علی کے ڈیتھ وارنٹ گذشتہ ہفتے جاری کیے گئے جس کے تحت مجرم عمران علی کو 17 اکتوبر کو تختہ دار پر لٹکایا جائے گا۔ تختہ دار پر لٹکانے سے قبل مجرم عمران علی کی 16 اکتوبر کو اس کے ورثا سے ملاقات کروائی جائے گی۔ ملاقات کل 12 بجے کروائی جائے گی۔ مجرم سے ملاقات کرنے والوں میں بہن ، بھائی اور والدین شامل ہوں گے۔اس حوالے سے جیل انتظامیہ نے ملزم کی والدہ سلمیٰ بی بی کو خط بھی لکھ دیا ہے۔ورثا 50 سے کم رشتہ داروں کو الوداعی ملاقات کے لیے ساتھ لا سکتے ہیں۔ خط میں ورثا کو ہدایت کی گئی ہے کہ صبح ساڑھے پانچ بجے ایمبولینس ، سوٹ اور چادر لے کر میت وصول کریں اور مجرم کی میت میڈیکل آفیسر کی رپورٹ کے بعد ہی ورثا کے حوالے کی جائے گی۔پھانسی کے موقع پر ڈیوٹی مجسٹریٹ مجرم عمران علی سے آخری خواہش دریافت کرے گا اور اس کا مروجہ طریقہ کار کے مطابق میڈیکل چیک اپ بھی کروایا جائے گا۔مجرم کے چہرے پر موت کا خوف صاف نمایاں ہے، مجرم کو اکثر اوقات اپنے بیرک میں گھناؤنے فعل پر پچھتاوے کے تحت روتے اور بلبلاتے ہوئے بھی دیکھا گیا ہے۔ مجرم عمران علی کو سینٹرل جیل میں عام قیدیوں کی طرح ہی کھانا دیا جاتا ہے اور اس کی سخت مانیٹرنگ بھی کی جاتی ہے تاکہ کہیں مجرم اپنے آپ کو کوئی نقصان نہ پہنچا لے۔ مجرم نے اس بات کا بھی اظہار کیا ہےکہ وہ آخری خواہش میں زینب کے والدین سے معافی کی درخواست کرنا چاہتا ہے۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment