خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور

مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست منظور کر لی گئی۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سماعت کی۔ خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست لاہور ہائیکورٹ نے منظور کی۔
لاہور ہائیکورٹ نے نیب کو خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کو گرفتار کرنے سے روک دیا۔ خواجہ برادران کی 24 اکتوبر تک عبوری ضمانت منظور کی گئی ۔ لاہور ہائیکورٹ نے دونوں بھائیوں کو 5،5 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے بھی جمع کروانے کا حکم دیا۔ عدالت نے خواجہ برادران کی درخواست ضمانت پر نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئےجواب بھی طلب کر لیا ہے۔
اس سے قبل 11 اکتوبر 2018ء کو اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست خارج کی تھی۔
خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق نے نیب کی جانب سے ممکنہ گرفتاری کے پیش نظر ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست دائر کی تھی جس پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے سماعت کرتے ہوئے درخواستوں کو خارج کر دیا تھا۔ واضح رہے کہ 10 اکتوبر کو گذشتہ روز خواجہ برادران نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی جس میں استدعا کی گئی کہ 16 اکتوبر کو نیب میں پیشی پر گرفتاری وارنٹ جاری نہ کیے جائیں ۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment