ٹیسٹ ٹیم کی قیادت کے بارے میں نہیں سوچ رہا : اسد شفیق

قومی ٹیسٹ ٹیم کے مڈل آرڈر بلے باز اسد شفیق نے کہا ہے کہ ٹیسٹ ٹیم کی قیادت کے بارے میں نہیں سوچ رہا اور سرفراز احمد تینوں فارمیٹس میں عمدہ کپتانی کر رہے ہیں ٗ فی الحال طویل دورانئے کی کرکٹ میں قیادت کے حوالے سے ان کی کوئی دلچسپی نہیں ہے،پاکستان کے لئے 62 ٹیسٹ میچوں میں 39.38کی اوسط سے 3889رنز اسکور کرنے والے دائیں ہاتھ کے بلے بازاسد شفیق نے ایک انٹرویومیں کہاکہ فی الحال طویل دورانئے کی کرکٹ میں قیادت کے حوالے سے ان کی کوئی دل چسپی نہیں ہے۔اسد شفیق نے کہا کہ

ان کے خیال میں سرفراز احمد تینوں فارمیٹس میں بہتر انداز میں قیادت کر رہے ہیں۔قیادت کے حوالے سے خبروں پر سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب وقت آئے گا تو اس بارے میں سوچوں گا، ابھی اپنے کھیل پر توجہ مرکوز ہے۔امنہوں نے کہاکہ پہلی اننگز میں سنچری نہ بنانے کا افسوس ہے ٗ دوسری اننگز میں ٹیم مینجمنٹ کی ہدایت کے مطابق بیٹنگ کی تھی۔انہوں نے کہا کہ دبئی ٹیسٹ کا ڈرا بجا طور پر آسڑیلیا کی جیت کے مترادف ہے لیکن اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ ابوظہبی میں ہم پر کسی قسم کا کوئی دباؤ ہو گا، ہم فیورٹ کی حیثیت سے ہی میدان میں اتریں گے۔آسٹریلوی اسپنر ناتھن لیون کے سوال پر قومی ٹیم کے بلے باز نے کہاک کہ ان کی صلاحیت پر کوئی شک نہیں کیا جا سکتا کیونکہ انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ میں تین سو سے زائد وکٹیں حاصل کر رکھی ہیں۔اسد شفیق نے کہا کہ دبئی ٹیسٹ کی دونوں اننگز کے دوران آف اسپنر نے بڑی نپی تلی بولنگ کی اور انھیں اس کے لئے سراہا جانا چاہیے۔ون ڈے ٹیم میں واپسی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے پاکستان کے لئے 60 بین الاقوامی میچز کھیلنے والے اسد شفیق نے کہا کہ وہ پاکستان کے لئے ہر فارمیٹ میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کا عزم رکھتے ہیں البتہ ٹیم بنانا سلیکٹرز کا کام ہے، وہ جب جہاں موقع دیں گے، میں تیار ہوں۔

اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں

یہ بھی پڑھیے

Leave a Comment